سوئے طیبہ جونہی قافلہ ہو گیا | خوبصورت نعتیہ کلام

Naat lyrics Urdu writing | Naat Sharif lyrics Urdu

0 20

سوئے طیبہ جونہی قافلہ ہو گیا
اشکوں کا بھی رواں سلسلہ ہو گیا

جو نبی ﷺ کے نگر کی طرف ہے بنا
ہم کو محبوب وہ راستہ ہو گیا

فضل رب سے چلے ہیں مدینہ کی اور
اب ہمارے لیے فیصلہ ہو گیا

یاد آقا ﷺ میں ہم بھی چلے جا رہے
لب پہ جاری یہ صل علی ہو گیا

لو ہماری مدینہ سے اب ہے لگی
دیکھئے کیسے کم فاصلہ ہو گیا

جیسے طیبہ میں پہنچے خوشی مل گئی
امتی کو بڑا آسرا ہو گیا

جالیوں پر یہ اظہر بلکتا ہوا
آقا ﷺ کے سامنے ہی کھڑا ہو گیا

سوئے طیبہ جونہی قافلہ ہو گیا
اشکوں کا بھی رواں سلسلہ ہو گیا

شاعری: ڈاکٹر محمد اظہر خالد

اگر آپ مزید مناجات، حمدیہ اشعار، نعت شریف یا  شان صحابہ پر کلام پڑھنا چاہتے ہیں تو یہ لازمی دیکھیں

طیبہ کی آ رہی ہے بہت یاد آج کل | نعت شریف

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.