بڑی خوش قسمتی ہے تم اگر غیبت نہیں کرتے | نیکیوں پر اردو شاعری

Best 2 line Urdu poetry in text

0 40

بڑی خوش قسمتی ہے تم اگر غیبت نہیں کرتے

جہاں میں بے وجہ لوگوں سے تم نفرت نہیں کرتے

 

مبارک ہے تمہارا نیکیوں میں لگنا اس جگ میں

گناہوں میں کبھی بھی تم یہاں رغبت نہیں کرتے

 

بقا کے گھر کی خاطر تم مشقت کو اٹھاتے ہو

نگاہوں میں فنا کے گھر کی تم ثروت نہیں کرتے

 

خدا کے واسطے کرتے عمل اچھے جہاں بھر میں

کبھی مقصود اپنا تم یہاں شہرت نہیں کرتے

 

خدا تم کو معزز بھی بنائے گا اسی جگ میں

گناہوں سے خراب اپنی اگر خلوت نہیں کرتے

 

خدا ان کو نوازے جو بہت ہی خرچ کرتے ہیں

اکٹھی اپنی بینکوں میں کبھی دولت نہیں کرتے

 

عطا اللہ نے کی ہے یہ اظہر شاعری ہم کو

کبھی ضائع مجازی عشق میں نعمت نہیں کرتے

 

بڑی خوش قسمتی ہے تم اگر غیبت نہیں کرتے

جہاں میں بے وجہ لوگوں سے تم نفرت نہیں کرتے

شاعری: ڈاکٹر محمد اظہر خالد

دھوکے کا گھر ہے مچھر کا پر ہے دنیا تو یارو اک رہگزر ہے| دنیا کی بے ثباتی پر اشعار

 

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.