بخت مانگے تو نہ تھے تیری دعا نے میرے | دلکش اردو شاعری

Urdu shayari about love | Urdu poetry heart touching

0 21

بخت مانگے تو نہ تھے تیری دعا نے میرے
پھر بھی ارمان کیے پورے خدا نے میرے

اب تو لمحوں کی بھی خیرات نہیں دیتا وہ
جس کے ہوتے تھے کبھی سارے زمانے میرے

میں مروت ہی میں بس ہار گیا ہوں ورنہ
شہر بھر ہی میں ہیں مشہور نشانے میرے

چٹھیاں بھیج تو دیتے ہو پلٹ آنے کی
ڈر یہ ہے تم نے ہی ، خیمے ہیں جلانے میرے

میں ابھی شعر کی تاثیر دکھاؤں گا تجھے
تو نے بڑھ کر ہیں ابھی پیر دبانے میرے

اب تو کلیوں کا چٹکنا بھی میں سن سکتا ہوں
کان یوں کھول دیئے تیری صدا نے میرے

اس کی رحمت نے ہی پردے میں رکھے ہیں ورنہ
عیب کس درجہ بکھر جاتے نجانے میرے

نامہ بر کے لیے ممکن نہ تھا کرنا جن کا
کام ایسے بھی کیے باد صبا نے میرے

جونہی غربت کی کڑی دھوپ مرے سر پہ پڑی
یار سب چھوڑ گئے مجھ کو پرانے میرے

گال بھی زرد، نظر ماند، پریشاں گیسو
کس نے اس حال میں ہیں ناز اٹھانے میرے

اے فرشتو جو اجازت ہو تو سستا لوں ذرا
بوجھ سے چُور ہوئے جاتے ہیں شانے میرے

رتجگوں کے ہیں بسیرے مری آنکھوں میں فقط
ہو گئے ختم سبھی خواب سہانے میرے

ہائے، وہ زلف، کمر، چشم، پلک ، عارض و لب
کس کے قبضے میں ہیں رب جانے خزانے میرے

چل کے خود آنا شب_وصل مرے گھر احسن
پاؤں بھی اس نے بڑی دیر دبانے میرے

بخت مانگے تو نہ تھے تیری دعا نے میرے
پھر بھی ارمان کیے پورے خدا نے میرے

 

شاعری: احسن اعجاز

اگر آپ محبت پر مزید اردو شاعری پڑھنا چاہتے ہین تو یہ لازمی دیکھیں

شعر اچھا ہو گیا ہے پر یہ آدھا اس کا ہے | خوبصورت اردو شاعری

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.