شب گزر بھی گئی …. انتظار اب بھی ہے | غمگین اردو شاعری

Urdu poetry 2 lines | Urdu poetry heart touching

0 26

شب گزر بھی گئی …. انتظار اب بھی ہے
دل کی حالت میں اک اضطرار اب بھی ہے

ہاں پتہ ہے کہ …… اب وصل ممکن نہیں
پھر بھی دل دیکھیے بے قرار اب بھی ہے

دل نے …. ٹالا بہت پھر بھی لب پر مرے
یار کا نام بے اختیار ……… اب بھی ہے

وقت کے ساتھ کیا سب سدھر جائے گا؟
بـعد صـدیوں کے دل زار زار اب بھی ہے

اتنا اندازہ باتوں سے ……… اس کی ہوا
پیار ….. گرچہ نہیں اعتبار اب بھی ہے

شاید اس کی …….. محبت کا ہے یہ اثر
ایک اک لفظ جو ….. تابدار اب بھی ہے

ہجر ہی میرا گر ہے مقدر تو پھر
رابطہ اس سے کیوں بار بار اب بھی ہے؟

اس کی اب بزم میں گونجتی ہے ہنسی
اور میری یہ چــشمَ اشکبار اب بھی ہے

بے وفا وہ ہے ….. دانش وفا والوں میں
ہے یقیں مجھ کو میرا شمار اب بھی ہے

شب گزر بھی گئی …. انتظار اب بھی ہے
دل کی حالت میں اک اضطرار اب بھی ہے

ہاں پتہ ہے کہ …… اب وصل ممکن نہیں
پھر بھی دل دیکھیے بے قرار اب بھی ہے

اگر آپ مزید ادس اردو شاعری پڑھنا چاہتے ہیں تو یہ لازمی دیکھیں

ہمیں بھی صبر آجائے کوئی ایسا کرشمہ ہو | اداس اردو شاعری

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.