طیبہ نگر سے ہم کو ہوا پیار بے مثال | اردو میں نعتیہ کلام

Naat sharif in urdu images |Naat with urdu lyrics

0 25

طیبہ نگر سے ہم کو ہوا پیار بے مثال
کیونکہ مکین ہیں وہاں سرکار  بے مثال

سارے ہی یار ان  کے بہت خوب ہیں مگر
روضے میں ساتھ سوئے ہیں دو یار بے مثال

جس کو رسول پاک  سے نسبت سی  ہو گئی
روضے کی ایک ایک ہے دیوار بے مثال

صادق امین کہتے تھے دشمن بھی آپ  کو
میرے نبی کا دیکھ کے کردار بے مثال

جن کو مرے نبی  نے اٹھایا تھا جنگوں میں
وہ تیر بے مثال ہیں،  تلوار بے مثال

ظلمت کا خاتمہ ہوا آمد سے آپ کی
آقا  سے پھیلے جگ میں انوار بے مثال

برسات ہو رہی ہے سخن کی اے اظہر اب
رب نے عطا کیے ہیں یہ افکار بے مثال

طیبہ نگر سے ہم کو ہوا پیار بے مثال
کیونکہ مکین ہیں وہاں سرکار  بے مثال

شاعری: ڈاکٹر محمد اظہر خالد

اگر آپ مزید مناجات، حمدیہ اشعار، نعت شریف یا  شان صحابہ پر کلام پڑھنا چاہتے ہیں تو یہ لازمی دیکھیں

طیبہ کی آ رہی ہے بہت یاد آج کل | نعت شریف

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.