سامنے جس کے ہوا کرتی تھی ہر بات میں چپ | خاموشی پر اشعار

Urdu poetry ghazal | Urdu poetry heart touching

0 17

سامنے جس کے ہوا کرتی تھی ہر بات میں چپ
جاتے جاتے وہ مجھے دے گیا سوغات میں چپ

لوگ کرتے ہیں نئے شہر کو آباد مگر
چھوڑ کے جاتے ہیں اجداد کے دیہات میں چپ

مجھ پہ تنہائیوں کا سایہ ہے سو اس لیے بھی
ہر گھڑی ہر جگہ ہوتی ہے مری ذات میں چپ

اس کو آواز لگائی بڑی مشکل سے مگر
اس نے یکدم سے تھما ڈالی مرے ہاتھ میں چپ

صرف اک شخص کے جانے سے خموشی کا خدا
کس لیے پھیلا رہا ہے مرے دن رات میں چپ

سامنے جس کے ہوا کرتی تھی ہر بات میں چپ
جاتے جاتے وہ مجھے دے گیا سوغات میں چپ

شاعری: بلال احمد خان

اب تو نہ کوئی غم ہے نہ کوئی خوشی مجھے | اردو غمگین شاعری

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.