سارے انساں جا رہے ہیں عارضی گھر چھوڑ کر | urdu poetry islamic

Urdu poetry text about life

0 21

سارے انساں جا رہے ہیں عارضی گھر چھوڑ کر

فانی دنیا کا سبھی ہی مال اور زر چھوڑ کر

 

اس جہان فانی سے تم دل لگانا نہ کبھی

ایک دن تو نے ہے جانا سارے منظر چھوڑ کر

 

زندگی اپنی گزارو رب کا قراں تھام کر

جھوٹے موٹے جادو ٹونے اور منتر چھوڑ کر

 

مسجدوں میں دل لگاؤ لاؤ اسلامی نظام

یہ کلیسا ، گردوارے اور مندر چھوڑ کر

 

وہ ہی داتا وہ ہی مولا ہے وہی مشکل کشا

مت کرو سجدہ کہیں اللہ کا در چھوڑ کر

 

کامیابی تیری ناممکن ہے دونوں ہی جہاں

گر چلے دنیا میں تم رستہ ء سرور ﷺ چھوڑ کر

 

تو پیام حق سنا لے شاعری سے ہر جگہ

عشق فانی کی سبھی باتوں کو اظہر چھوڑ کر

 

سارے انساں جا رہے ہیں عارضی گھر چھوڑ کر

فانی دنیا کا سبھی ہی مال اور زر چھوڑ کر

شاعری: ڈاکٹر محمد اظہر خالد

فانی دنیا سے چلے ہیں سارے انساں چھوڑ کر|فانی دنیا پر اشعار

urdu poetry islamic | Urdu poetry text about life | Urdu poetry heart touching

 

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.