مری توجہ میں جس روز کچھ کمی ہوگی | اردو شاعری | urdu poetry 2 lines

urdu poetry love sad | urdu poetry broken heart | urdu poetry sad 2 lines

0 8

مری توجہ میں جس روز کچھ کمی ہوگی
یقین کر کہ تری جان پر بنی ہوگی

ہمارے گھر جو اندھیرے ہیں،کون مانے گا ؟
ہماری چاند ستاروں سے دوستی ہوگی !

تمھارے جیسا حسیں روۓ گا مرے غم میں!
تو میرے مرنے پہ مجھ کو بہت خوشی ہوگی

جو دِلسَتاں ہوں اندھیرے میں تھوڑی لُوٹتے ہیں
چراغاں کر کے وہاں رسمِ رہزنی ہوگی

تری کشش سے بڑا بھی کھنچاؤ ہوگا کوئی!
تری کمی سے بھی بڑھ کر کوئی کمی ہوگی؟

وہ خوش خرام ہے ایسی کہ سیڑھیوں کے بغیر
کسی جوان کے دل میں اتر رہی ہوگی

جگر جلایا ہے تاریکیوں کے ڈر سے شفیق
نواحِ جسم میں کچھ دن تو روشنی ہوگی

مری توجہ میں جس روز کچھ کمی ہوگی
یقین کر کہ تری جان پر بنی ہوگی

شاعری: نعمان شفیق

اک ذرا مجھ سے دمِ مرگ تماشہ نہ ہوا | غمگین شاعری

اگر آپ مزید ادس اردو شاعری پڑھنا چاہتے ہیں تو یہ لازمی دیکھیں

If you want to read more urdu sad poetry please visit

amazing urdu poetry | best urdu poetry in text | urdu poetry love sad |urdu poetry text | urdu poetry broken heart | urdu poetry sad |urdu poetry sad 2 lines | urdu poetry sad poetry

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.