چلنا پڑا ہے تنہا کوئی نہیں کسی کا|مطلبی دوست شاعری

5 174

چلنا پڑا ہے تنہا کوئی نہیں کسی کا
دیکھی ہے میں نے دنیا کوئی نہیں کسی کا

مجبوریوں نے گھیرا تب جان پائے ہم بھی
اپنا ہو یا پرایا کوئی نہیں کسی کا

اخلاص کے دئیے کو خوں سے جلاوں لیکن
دھوکہ ہے سب کا پیشہ کوئی نہیں کسی کا

ہمدرد و ہمسفر کی کوشش کروں میں کیسے
دل کی نظر سے دیکھا کوئی نہیں کسی کا

اس طلسمی جہاں کے بہروپیوں پہ ہرگز
مت کیجئے بھروسہ کوئی نہیں کسی کا

میری نظر کے آگے بھیڑِ جہاں یہ ہدہد
دن رات اک تماشہ کوئی نہیں کسی کا

چلنا پڑا ہے تنہا کوئی نہیں کسی کا
دیکھی ہے میں نے دنیا کوئی نہیں کسی کا

 

شاعری: ہدہد الہ آبادی

اگر آپ دوستی پر مزید شاعری پڑھنا چاہتے ہیں تو یہ لازمی دیکھیں

ہدہد الہ آبادی

5 تبصرے
  1. najlepszy sklep کہتے ہیں

    Wow, wonderful weblog format! How lengthy have you ever been running a blog for?
    you made running a blog look easy. The overall look of your website is fantastic, let alone
    the content material! You can see similar:
    sklep internetowy and here najlepszy sklep

  2. sklep online کہتے ہیں

    Hi there, all is going nicely here and ofcourse every one is sharing data, that’s in fact good, keep
    up writing. I saw similar here: sklep and also here:
    sklep online

  3. sklep internetowy کہتے ہیں

    Great post. I was checking continuously this blog and I’m impressed!
    Extremely useful information specifically the last part :
    ) I care for such information much. I was seeking this particular
    information for a long time. Thank you and good luck.
    I saw similar here: Sklep

  4. dobry sklep کہتے ہیں

    Outstanding quest there. What happened after? Take care!
    I saw similar here: Sklep online

  5. https://hitman.agency/ کہتے ہیں

    Hi there! Do you know if they make any plugins to assist with Search Engine Optimization? I’m trying to get my
    blog to rank for some targeted keywords but I’m not seeing very good results.
    If you know of any please share. Cheers! You can read similar blog here: Backlink Portfolio

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.