براؤزنگ ٹیگ

poetry about friend

سارے منافقوں سے تجھ کو بچائے اللہ | دوست کے لئے دعا | urdu poetry for friend

سارے منافقوں سے ، تجھ کو بچائے اللہ سب تیرے دشمنوں سے ، تجھ کو بچائے اللہ جو تیری کامیابی ، پر جل رہے جہاں میں ان سارے حاسدوں سے ، تجھ کو بچائے اللہ جانے بغیر جو بھی ، غیبت ہیں کرتے رہتے ان کی خباثتوں سے ،…

کمینہ پن دکھاۓ گا کمینہ، یار سمجھا کر | دسمبر اور فحاشی پر اشعار

کمینہ پن دکھاۓ گا کمینہ، یار سمجھا کر دسمبر ہے فحاشی کا مہینہ، یار سمجھا کر بڑی ظالم ہے یہ دنیا تجھے برباد کر دے گی نہیں ہوتی محبت بے قرینہ، یار سمجھا کر لدا ہو جو غلاظت سے بدن وہ پاک کیا ہوگا بڑا نا پاک ہے اُس کا پسینہ، یار سمجھا…

ملیں گے کیسے ترے یار اب تجھے سارے | اداس اردو شاعری

ملیں گے کیسے ترے یار اب تجھے سارے تفکرات کی دنیا میں گم ہوئے سارے لکھا ہوا ہے ترا نام خانۂِ دل میں بجھے نہیں ہیں تری یاد کے دیے سارے یہ رنج صحرا نوردی نے تو نہیں بخشے عطائے یار سمجھ لو یہ آبلے سارے۔ اُتار پھینکو غلامی کی ساری…

دیا غم کا جلانے کو چلے غمخوار آتے ہیں | دوستوں کے نام شاعری

دیا غم کا جلانے کو چلے غمخوار آتے ہیں بڑھانے سوزشِ خاطر مرے دلدار آتے ہیں خبرپھیلی ہوٸی تھی کُو بہ کُو میری علالت کی مگرپھر بھی عیادت کو فقط اغیار آتے ہیں حوادث نے لگائی آگ جس دم آشیانے کو بجھانے حلقۂ یاراں لٸے انگار آتے ہیں…

اگر تم عیب میرے دنیا والوں سے چھپا لیتے| دوستی شاعری

اگر تم عیب میرے دنیا والوں سے چھپا لیتے مجھے بھی دل سے آخر دوست اپنا تم بنا لیتے یہی تو دوستی کا وصف ہے دنیا میں ہر جانب وفاؤں کا صلہ لیتے، محبت کی جزا دیتے بھروسہ دل سے کر لیتے تو دل میں گھر بنا لیتے میرے الفاظ گر اپنی ہنسی میں نہ…

چلنا پڑا ہے تنہا کوئی نہیں کسی کا|مطلبی دوست شاعری

چلنا پڑا ہے تنہا کوئی نہیں کسی کا دیکھی ہے میں نے دنیا کوئی نہیں کسی کا مجبوریوں نے گھیرا تب جان پائے ہم بھی اپنا ہو یا پرایا کوئی نہیں کسی کا اخلاص کے دئیے کو خوں سے جلاوں لیکن دھوکہ ہے سب کا پیشہ کوئی نہیں کسی کا ہمدرد و ہمسفر…

بدگماں ہوکر ہمارا یوں نا پیچھا کیجیے

بدگماں ہوکر ہمارا یوں نا پیچھا کیجیے ہم ترے دشمن نہیں ہم پر بھروسہ کیجیے ہم سے بڑھ کر کون ہے اس سرزمیں کا خیرخواہ ہم کو دشمن کی نگاہوں سے نا دیکھا کیجیے بدظنی کو چھوڑ کر نظروں میں وسعت لائیے نفرتیں چاہت میں بدلیں کام ایسا کیجیے…

ائے ہمدم مرے حرفِ اعجاز سن | قیدی دوست کے لئے نظم

ائے ہمدم مرے حرفِ اعجاز سن صبر کرنے والوں کا یہ راز سن ہر اک شب کی قسمت میں ہے اک سحر وہ نصر من اللہ کی آواز سن تو رہ کر قفس میں بھی آزاد ہے اسیر ِ خزاں تیرا صیاد ہے بدست ِصبا ِچمن تیرا نام یہ گلشن ترے دم سے آباد ہے…