اک رويہ تھا جو ‘روا’ نہ ہوا | اداس شاعری | urdu poetry sad 2 lines

urdu poetry best | urdu poetry broken heart | urdu poetry text | urdu poetry love

1 6

اک رويہ تھا جو ‘روا’ نہ ہوا

ورنہ پہلے بھی کم برا نہ ہوا

 

اسکو لاۓ تھے کھینچ تان کے سو

وہ دوا ہو گیا،شفا نہ ہوا

 

جانے کیا نقص تھا نمک داں میں ؟

زخم سلگا ،مگر ہرا نہ ہوا

 

ہاۓ نقصان پارسائی کے !

ہم سے اک شخص بھی ادا نہ ہوا

 

دل شکن ہر کوئی تھا بستی میں

ہاں مگر ! کوئی آپ سا نہ ہوا

 

یہ جو عاجز ہے،سر اٹھاتا نہیں

اسکی کوشش تھی پر! خدا نہ ہوا

 

سوختہ دل ہوا شفیق اب تو

اب برابر ہے،تو ہوا ،نہ ہوا

 

اک رويہ تھا جو ‘روا’ نہ ہوا

ورنہ پہلے بھی کم برا نہ ہوا

شاعری: نعمان شفیق

ہم لوگ، تیری بات ،ترے بعد مان کر | پچھتاوے پر اشعار

If you want to read more Urdu poetry sad, please visit

urdu poetry sad| urdu poetry broken heart| urdu poetry text|urdu poetry sad 2 lines| urdu poetry best | Urdu poetry ghazal| urdu poetry love

 

1 تبصرہ
  1. […] اک رويہ تھا جو ‘روا’ نہ ہوا | اداس شاعری […]

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.