زندگی میں اب اُجالے ہی نہیں ھیں ہمنوا | اداس اردو شاعری

best 2 line sad urdu poetry text

0 20

زندگی میں اب اُجالے ہی نہیں ھیں ہمنوا

ظلمتیں ھی ظلمتیں پھیلی ہوئی ہیں ہرجگہ

 

آڑے آتا ھی نہیں مشکل گھڑی میں کوئی بھی

دوستی ہے مطلبی، رشتے ہیں سارے بے وفا

 

ھے بظاہر پارسائی ، نیتوں میں کھوٹ ھے

ظالموں نے اوڑھ لی ہے خاکساری کی ردا

 

سوز کیا ہوتا ھے، اب تک اِس سے تھا میں بےخبر

عشق نے مجھ کو کیا اِس درد و غم سے آشنا

 

نفرتوں کے بیج بونے میں لگے ھیں سارے لوگ

الفتوں کا دہر سے نام و نشاں مٹنے لگا

 

میرے دل کی آگ پھر بھی بُجھ نہ پائی حیف ھے

میری آنکھوں سے ھے اک سیلاب جاری اشک کا

 

اِس جہاں سے کوچ کر جانا ہی اچھا ھے مُجھے

اب یہاں اذلان باقی کچھ نہیں غم کے سوا

 

زندگی میں اب اُجالے ہی نہیں ھیں ہمنوا

ظلمتیں ھی ظلمتیں پھیلی ہوئی ہیں ہرجگہ

شاعری: اذلان الرحمان

اگر آپ مزید اداس شاعری پڑھنا چاہتے ہیں تو یہ لازمی دیکھیں 

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.