اداس دل کی دکھی کہانی تمہیں سناؤں یا رہنے دوں بس؟

0 6

اداس دل کی دکھی کہانی تمہیں سناؤں یا رہنے دوں بس؟
یہ میرے دل کی جو سرزمیں ھے تمہیں دکھاؤں یا رہنے دوں بس؟

تمام دنیا میں دیکھتے ھو کہا گیا جس کو جسد واحد
نبی کی امت تڑپ رھی ھے تمہیں بتاؤں یا رہنے دوں بس؟

سسک رھی ھے تمام امت تمہیں مسلسل بلا رھی ھے
یوں خواب غفلت میں سو رھے ھو تمہیں جگاؤں یا رہنے دوں بس؟

صحابہ کی زندگی پڑھو تم انہیں کے نقش قدم پہ آؤ
ابھی بھی دنیا میں معرکے ھیں تمہیں بلاؤں یا رہنے دوں بس؟

ذرا مرے ساتھ تم تو آؤ تمہیں وھاں پر میں لے چلوں کیا؟
جہاں جہاں بیٹیاں تڑپتی تمہیں پھراؤں یا رہنے دوں بس؟

چلو چلو معسکر بلاتے ھیں تم کو میرے اے ھم نشینو
نشہ شہادت کے جام میں ھے تمہیں پلاؤں یا رہنے دوں بس؟

ترانہ اظہر کا سن رھے ھو یا سن کے تم ان سنی ھو کرتے؟
خدا کی جنت کا اب تعارف تمہیں کراؤں یا رہنے دوں بس؟

اداس دل کی دکھی کہانی تمہیں سناؤں یا رہنے دوں بس؟
یہ میرے دل کی جو سرزمیں ھے تمہیں دکھاؤں یا رہنے دوں بس؟

شاعری: ڈاکٹر محمد اظہر خالد

اگر آپ مزید اداس شاعری پڑھنا چاہتے ہین تو یہ لازمی دیکھیں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.