تلاشِ یار میں خود کو شُمار کرتے ہوئے | دلکش اردو شاعری

Urdu poetry 2 lines | Urdu poetry beautiful

1 13

تلاشِ یار میں خود کو شُمار کرتے ہوئے
میں زخمی ہوتا رہا ایک زخم بھرتےہوئے

ہمارے شہر کے آداب منفرد سے ہیں
کہ اپنے ڈر کو چھپانا پڑا ہے ڈرتے ہوئے

کٹی پتنگ کی ہمت یا خودفریبی ہے
بھٹک رہی ہے فضا میں مگر اکڑتے ہوئے

خدا کے فضل سے باقی ہے رونقِ دنیا
کہا کنارے سے اک موج نے بچھڑتے ہوئے

قدم قدم پہ مراتب بڑھائے جاتے ہیں
کرو گے آپ یہ محسوس آگےبڑھتے ہوئے

طریقِ حق کی طرف گامزن ہو دل میرا
کہ ڈھل رہی ہے جوانی آوارہ پھرتے ہوئے

کسی پہ غالب و اقبال کا اثر نہ ہوا
اثر لیا ہے کسی نے اثر کو پڑھتے ہوئے

اے ذوالجلال تُو اپنےطلب کی حاجت دے
کروں میں دین کی خدمت عدو سےلڑتےہوئے

تلاشِ یار میں خود کو شُمار کرتے ہوئے
میں زخمی ہوتا رہا ایک زخم بھرتےہوئے

شاعری: ہدہد الہ آبادی

اگر آپ دوستی پر مزید شاعری پڑھنا چاہتے ہیں تو یہ لازمی دیکھیں

تُو مصروفِ زمانہ ہے تجھے ہم یاد کیا آئیں| دوستی پر شاعری

1 تبصرہ
  1. fordero.shop کہتے ہیں

    Wow, amazing blog layout! How lengthy have you been blogging for?
    you make blogging glance easy. The full glance of your web site is wonderful,
    as neatly as the content! You can see similar here dobry sklep

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.