تمنا ہے شدت سے حج پر بلانا| حج پر اشعار

1 139

تمنا ہے شدت سے حج پر بلانا
مجھے گرد کعبے کے یارب پھرانا

ترستی ہیں آنکھیں تڑپتا ہے یہ دل
مقدر میں لکھ اور کر دے روانہ

میرے خشک ہونٹوں کو سیراب کر دے
بلا کر مجھے بھی وہ زمزم پلانا

صفا اور مروہ وہ غار حرا بھی
وہ مکہ مدینہ مجھے تو دکھانا

چمکتا رہے میری آنکھوں میں ہر دم
وہ کعبے کا منظر وہ منظر سہانا

میں کعبے کی چادر کو ہاتھوں سے تھاموں
یہ محمود بولے وہی دے ٹھکانہ

تمنا ہے شدت سے حج پر بلانا
مجھے گرد کعبے کے یارب پھرانا

شاعری:۔ سید محمود شاہ

اگر آپ مزید حج پر اشعار پڑھنا چاہتے ہیں تو یہ لازمی دیکھیں

1 تبصرہ
  1. Marylin کہتے ہیں

    You’re truly a good webmaster. The web site loading velocity is incredible.
    It seems that you’re doing any distinctive trick. Furthermore, the contents are masterwork.

    you’ve done a wonderful job in this topic! Similar here: tani sklep and also here: E-commerce

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.