میں بھی دیکھ لوں مسیحا مجھے کچھ قرار آۓ| اداس شاعری

3 25

میں بھی دیکھ لوں مسیحا مجھے کچھ قرار آۓ
ہے اگر جہاں میں کوئی مِرا غمگسار آۓ

مجھے ایسا لگ رہا ہے کہ پکارتی ہے دوزخ
مِری آگ کو بجھانے کوئی اشک بار آۓ

مِرے غمگسار کاتب مِری داستاں میں لکھنا
کبھی مختصر ہوۓ غم کبھی بے شمار آۓ

بھرے زخم ان کے آخر سِلے پیرہن دریدہ
درِ یار پر جو دامن لئے تار تار آۓ

نہیں جان بازوؤں میں مِرے وقت کے اپاہج
سبھی منتظر کھڑے ہیں کوئی شہسوار آۓ

ملا ہم کو چین آ کر تِری خُلد میں خدایا
بڑی تنگ تھی وہ دنیا جہاں دن گزار آۓ

میں بھی دیکھ لوں مسیحا مجھے کچھ قرار آۓ
ہے اگر جہاں میں کوئی مِرا غمگسار آۓ

شاعری : بابر علی برق

اگر آپ مزید اداس شاعری پڑھنا چاہتے ہیں تو یہ لازمی دیکھیں 

3 تبصرے
  1. dobry sklep کہتے ہیں

    Wow, amazing blog layout! How lengthy have you been running
    a blog for? you make blogging glance easy. The full glance of
    your web site is fantastic, let alone the content material!
    You can see similar: najlepszy sklep and here dobry sklep

  2. najlepszy sklep کہتے ہیں

    WOW just what I was searching for. Came here by searching for ecommerce I saw similar here:
    sklep online and also here: najlepszy sklep

  3. sklep internetowy کہتے ہیں

    We’re a group of volunteers and opening a new scheme in our community.
    Your website provided us with valuable information to
    work on. You’ve done a formidable job and our entire community will be grateful to you.
    I saw similar here: Sklep internetowy

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.